120

محبوبہ مفتی کی مودی سرکار کے فن حکمرانی کی پھر تنقید

پی ڈی پی صدر اور جموں وکشمیر کی سابق وزیر اعلیٰ محبوبہ مفتی نے مرکزی سرکار کے فن حکمرانی کو ایک مرتبہ پھر تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہاکہ ہر وہ شخص جو بھارت میں برسراقتدار مرکزی سرکار کے غلط فیصلوں اور اقدامات کے خلاف آواز اٹھاتاہے اسے پاکستانی ایجنٹ کا نام دیا جاتاہے۔ایس این ایس کے مطابق ایک ٹویٹ میں محبوبہ مفتی نے کہاکہ بھارت میں انسانی حقوق کے اداروں نے اس طرح کی کھلی خلاف ورزیوں پر توجہ دینا چھوڑ دیاہے اس لئے بقول ان کے اقوام متحدہ کو مداخلت کرنی چاہئے۔محبوبہ مفتی کا یہ ٹویٹ پارٹی کے محبوس لیڈر وحید پرہ کے خلاف دائر کئے گئے اس چارج شیٹ کے تناظر میں دیکھا جارہاہے جس میں ثانی الذکر پر الزام عائد کیا گیا کہ وہ جنگجوﺅں اور مین اسٹریم سیاستدانوں کے درمیان تعلقات کا سرگرم محرک تھا۔محبوبہ مفتی نے کہا کہ جب بھارت کے انسانی حقوق کے اداروں نے اپنا کام کرنا چھوڑ دیاہے تو لوگ انصاف کی خاطر عالمی سطح کی بشری حقوق اداروں سے رجوع کرنے پر مجبورہیں۔انہوں نے اس بات پر سخت افسوس اور تشویش کا اظہار کیا کہ بھارت سرکار ہر اس شخص یا سیاستدان کو پاکستانی ایجنٹ کا الزام دیتی ہے جو اس کے کام کاج یا غلط پالیسیوں پر آواز اٹھاتاہے۔واضح رہے کہ پی ڈی پی سے وابستہ وحید پرہ پچھلے ایک سال سے نظر بند ہے اور ان کے خلا ف جموںوکشمیر پولیس نے ایک چارج شیٹ دائر کی جس میں انہیں جنگجوﺅں کا اہم سرمایہ قرار دیاگیا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں