115

جموں کشمیر پولیس میں 800 سب انسپکٹروں کی اسامیاں پُر کرنے کی منظوری

بھرتی کاعمل ایس ایس بی کے ذریعے صاف و شفاف کے طریقے پر انجام دیا جائے گا


لیفٹنٹ گورنر منوج سنہا نے جموں کشمیر پولیس میں 800 سب انسپکٹر بھرتیوں کی تجویز کو منظوری دی ہے جبکہ پولیس،جیل خانہ جات، اور فائراینڈ سروسز میں یہ اسامیاں پُر کی جائیں گی ۔ اس کے علاوہ حکومت بیک ٹو ولیج پروگرام کے اگلے مرحلے کے تحت مالی امداد کے لئے 50 ہزار نوجوانوں تک پہنچنے کا منصوبہ بنا رہی ہے ، جس کی تفصیلات جلد ہی حتمی شکل دی جائیں گی ۔ کرنٹ نیوز آف انڈیا کے مطابق بھرتی کے عمل کو ایک نیا محرک دیتے ہوئے جو COVID وبائی امراض کی وجہ سے سست ہوگئی ہے ، لیفٹیننٹ گورنر منوج سنہا نے جمعہ کے روز جموں وکشمیر پولیس میں 800 سب انسپکٹرز بھرتی کرنے کی تجویز کو منظوری دے دی۔ بھرتی کے عمل میں شفافیت اور انصاف پسندی کو یقینی بنانے کے لئے ، لیفٹیننٹ گورنر نے پولیس ، جیل اور فائر اینڈ ایمرجنسی سروسز کے محکموں میں غیر ہیزٹ سطح کے تمام عہدوں کیلئے سلیکشن کا عمل خدمات سلیکشن بورڈ کو سونپا ہے۔ انتخاب تحریری اور جسمانی ٹیسٹ پر مبنی ہوگا۔ جسمانی ٹیسٹ کے لئے کمیٹی کا قیام حکومت کے مشورے سے ایس ایس بی کرے گا۔ فٹنس ٹیسٹ کے پورے عمل کو شفافیت کے مقصد کے لئے پوری طرح سے ویڈیو گراف کیا جائے گا۔ انتظامیہ جموں و کشمیر کے نوجوانوں کو بااختیار بنانے کے لئے سرکاری محکموں میں 25ہزارملازمتوں کی بھرتی کے عمل کو تیز کرنے کی طرف گامزن ہے۔ سروسز سلیکشن بورڈ (ایس ایس بی) کی جانب سے مختلف محکموں میں بھرتیوں کے لئے لگ بھگ 18ہزار آسامیوں کی تشہیر کی گئی ہے۔ لیفٹیننٹ گورنر نے کہا کہ ریاست کی مجموعی ترقی میں نوجوانوں کا ایک اہم کردار ہے۔ حکومت بیک ٹو ولیج پروگرام کے اگلے مرحلے کے تحت مالی امداد کے ل 50ہزار نوجوانوں تک پہنچنے کا منصوبہ بنا رہی ہے ، جس کی تفصیلات جلد ہی حتمی شکل دی جائیں گی۔ کہا کہ ، آج تک ، جے اینڈ کے بینک نے مرکزی خطوں کے ،600 19نوجوانوں کو 340 کروڑ روپے سے زیادہ کی رقم فراہم کی ہے۔ تاکہ ان کو اپنے خوابوں کی تکمیل کے لئے مالی طور پر طاقت دی جاسکے اور دوسروں کے لئے بھی معاش کے مواقع پیدا ہوں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں