119

مہاراشٹریہ میں کووڈ وائرس کی تیسری لہر شروع،97 فیصدی بچوں میں کووڈ کی شدید علامات

مہاراشٹریہ جہاں کوروناوائرس کے کیس ملک میں سب سے زیادہ سامنے آرہے تھے اب یہاں بچے متاثر ہ رہے ہیں اور ماہرین کا کہنا ہے کہ مہاراشٹریہ میں کووڈ کی تیسری لہر شروع ہوچکی ہے جس نے بچوںکو جکڑ لیا ہے ۔ اور اندیشہ ظاہر کیا جارہا ہے کہ یہ لہر اب پورے ملک میں پھیل سکتی ہے ۔ کرنٹ نیوز آف انڈیا کے مطابق مہاراشٹر کے احمد نگر ضلع میں تقریبا 10ہزار بچوں اور نوعمر لڑکوں میں کورونا وائرس مثبت پایا گیا ہے مئی 2021 میں مہاراشٹر کے احمد نگر ضلع میں تقریبا 10ہزار بچوں اور نوعمر لڑکوں میں کورونا وائرس مثبت پایا گیا ہے۔ جن میں سے 96 سے 97 فیصد میں کورونا کی شدید علامات پائی گئی ہے۔تاہم احمد نگر کی کووڈ ٹاسک فورس کے ایک رکن سچن سولت نے کہا کہ بچوں اور نوعمروں کی بڑی تعداد میں مثبت تشخیص کرنے میں کوئی تشویش ناک بات نہیں ہے۔انہوں نے بتایا کہ یہ تعداد ضلع میں مہینے میں درج کووڈ۔19 کیسوں میں سے تقریبا 11.5 فیصد ہے جو قابل قبول ہے۔ یہ کیس کوئی غیر معمولی بات نہیں ہے۔سچن سولت نے بتایا کہ یہ بچے اور نوعمر افراد اپنے خاندان کے بڑوں سے متاثر ہوئے ہیں۔ انہوں نے کہا ، "ہمیں یاد رکھنا چاہئے کہ ایک گھر میں سیکڑوں مشترکہ خاندان اکٹھے رہتے ہیں ، جہاں انفیکشن آسانی سے پھیل سکتا ہے۔ریاستی محکمہ صحت کے مطابق مہاراشٹرا میں پیر کو 15077 نئے COVID-19 کیس رپورٹ ہوئے ، جو 15 مارچ کے بعد سب سے کم ہیں ، جس کی کل تعداد 57,46,892 رہی ہے ، جبکہ 184 مزید اموات کی تعداد 95344 ہوگئی۔گذشتہ 15 مارچ کو ریاست میں 15051 واقعات رپورٹ ہوئے جب اس نے تباہ کن دوسری COVID-19 کی لہر کو متاثر کیا۔ روزانہ گنتی میں اتوار کو رجسٹرڈ 18600 بیماریوں کے لگنے سے بھی تیزی سے کمی آئی۔محکمہ صحت کی جانب سے ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ دن کے دوران 33000 مریضوں کو اسپتالوں سے فارغ کیا گیا ، جس سے بازیاب ہونے والے کیسوں کی تعداد 53,95,370ہوگئی۔ اس نے بتایا کہ ریاست میں اب 2,53,367 فعال کیس ہیں۔ محکمہ نے بتایا کہ کووڈ۔19 سے صحت یابی کی شرح 93.88 فیصد ہے جبکہ اموات کی شرح 1.66 فیصد ہے۔بیان میں کہا گیا ہے کہ مہاراشٹر میں 1,93,446 مزید افراد کو کورونا وائرس کا تجربہ کیا گیا ، اب تک جانچنے والے نمونوں کی تعداد 3,50,55,054 ہوگئی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں